The news is by your side.

اب اور کس طرح دنیا تمہارے ساتھ چلے…(غزل)

عزم الحسنین عزمی کا تعلق شہر گجرات کے گاؤں ڈوڈے سے ہے۔ مختلف کتابوں کے مطالعے کے شوق کے ساتھ شاعری میں‌ دل چسپی پیدا ہوئی اور مشقِ سخن کے ساتھ ان کا فن نکھرتا گیا اور خیالات میں پختگی آتی چلی گئی۔ ان کی ایک غزل پیشِ خدمت ہے

غزل
کب اک ذرا کسی لذّت سے آشنا رہا ہے
کہ دل کا خالی دھڑکنے پہ اکتفا رہا ہے

یہ کون کرگیا ہے کہکشائیں بے ترتیب
یہ کون سوئے خدا راستہ بنا رہا ہے

ابھی تو آ کے زمانے میں دل لگا تھا مرا
عدم بھی کتنے غلط وقت پر بلا رہا ہے

وہ لے ہی آئے کوئی درد کل بڑا کسے علم
ابھی تلک تو مرا ضبط ہی بڑا رہا ہے

گدا کو موڑنا خالی تھا مشغلہ اس کا
یہ اب گلی میں جو کاسہ بدست جارہا ہے

اب اور کس طرح دنیا تمہارے ساتھ چلے
کہ جس پہ سوگ تھا واجب وہ مسکرا رہا ہے

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں