The news is by your side.
Güvenilir bahis siteleri 2022
betsat
mecidiyeköy escort mecidiyeköy escort etiler escort etiler escort taksim escort beşiktaş escort şişli escort bakırköy escort ataköy escort şirinevler escort avcılar escort esenyurt escort bahçeşehir escort istanbul escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort
mariobet.biz
betwoon kayıt
deneme bonusu veren siteler
canlı casino
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
bailarinas de la hora pico Britney Shannon barely keeping whole thing in her throat Nicole Nix obtient saucissonner par un russe mec sur une table
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
gaziantep escort
gaziantep escort
modabet giriş
ankara escort escort ankara escort
Tipobet365
Canlı Kumar
istanbul evden eve nakliyat
Group of passionate teen angels lick every other Hottie babe Lou Charmelle fucking a black meat Milf Nina Elle gets fucked in dogystyle
istanbul masaj salonuistanbul masaj salonuhttp://www.escortperl.com/Gaziantep escortDenizli escortAdana escortHatay escortAydın escortizmir escortAnkara escortAntalya escortBursa escortistanbul escortKocaeli escortKonya escortMuğla escortMalatya escortKayseri escortMersin escortSamsun escortSinop escortTekirdağ escortEskişehir escortYalova escortRize escortAmasya escortBalıkesir escortÇanakkale escortBolu escortErzincan escort

ایک کربلا ہے‘ ایک کشمیر ہے

اگر  آپ کو مطالعہ کا شوق ہے تو آپ اسلام سے قبل کا مطالعہ کریں یا طلوعِ اسلام کے بعد کا ،  انسانیت کی تاریخ جنگ و جدل سے لبریز ہے۔ یہ جنگیں طاقت کے توازن کے بگاڑ کی وجہ سے لڑی جاتی رہیں اور طاقتور اپنا تسلط اپنا رعب و دبدبے کیلئے انسانی جانوں سے کھیلتے رہے ہیں۔ انسانیت کی وحشت و کربناک تذلیل ہوتی رہی ہے اور عزتیں پامال ہوتی رہی ہیں۔ بے رحمی کی اعلی ٰسے اعلی ٰمثالیں قائم کی جاتی رہیں۔ مگر ظلم اور بربریت کی داستانیں رقم کرنے والے اور انسانی خون کی بے حرمتی کرنے والے بے رحم اور سفاک حکمران اپنے کئے پر کبھی بھی شرمندہ اور نادم نہیں دکھائی دیئے۔ تاریخ کی سیاہ کاریوں سے بھی سبق نا سیکھنے والے عقل کے اندھوں کی ایک طویل فہرست ہے۔ آج اکیسویں صدی میں بھی یہ جنگ و جدل کا بازار گرم ہے خون آج بھی ویسے ہی بہایا جا رہا ہے جیسے زمانہ جہالیت میں بھایا جاتا تھا۔ جہاں ہم ترقی کی بلندیوں کو چھو رہے ہیں تو وہیں سفاکیت کی اور بے رحمی کی داستانیں بھی رقم کرتے جا رہے ہیں۔ ہمارے پڑوسی ملک بھی جنگی جنون جیسی بیماری میں مبتلا ہوا ہے۔

تاریخ ایک ایسے ہی جنگ و جدل جیسے سانحے کو لے کر ایک طرف تو شرمندہ و نادم دیکھائی دیتی ہے تو دوسری طرف فخر سے حق کا علم بلند کئے دیکھائی دیتی ہے۔ دنیا اس عظیم واقع کو شہادتِ حسین رضی اللہ تعالی عنہ سے یاد رکھے ہوئے ہے۔ یہ اسلامی تاریخ کا بیک وقت روشن اور تاریک باب ہے۔ یہ واقعہ کربلا ہے، جہاں اہلِ بیت پر ہونے والی ظلم اور  بربریت کی ایک اور مثال قائم کی گئی۔ جب امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ اور انکے اہل خانہ کو بھوک اور پیاس کی حالت میں شہید کیاگیا۔ اس واقع کی جہاں مذہبی اعتبار سے بہت اہمیت ہے وہیں اس واقع سے سیاسی اور شخصی معاملات پر بھی اپنے گہرے اثرات چھوڑے۔ جس کیلئے یہ کہا جاتا ہے کہ’اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد‘۔

ظلم کے پہاڑ توڑنے والے، معصوم بچوں اور بچیوں کو پانی کی بوند بوند کو ترسانے والے، شیر خوار بچے پر تیر برسانے والے تاریخ کی تاریکی کے گہرے کنویں کی نظر ہوگئے۔ ہمارا تو ایمان ہے کے شہید زندہ ہوتا ہے اور کربلا والے آج بھی ویسے ہی زندہ ہیں۔ صرف دنیائے اسلام ہی نہیں بلکہ دیگر مذاہب کے لوگ بھی عزمِ حسین رضی اللہ تعالی عنہ اور اہل بیت کی قربانی کو دنیا کے لیئے ظلم کے آگے ڈٹ جانے کی اعلی ترین مثال قرار دیتے ہیں۔

گزشتہ کئی دہائیوں سے کشمیری حق خود ارادیت کی جدوجہد میں بر سرِپیکار ہیں۔ کربلا اور کشمیر میں ’ک‘ کی طرح صورتحال بھی مشترک ہے۔ یہاں بھی معاملہ کسی باطل کے ہاتھ پر بیعت کا ہے ، یہاں کا وزیرِاعلیٰ بھارتی حکومت کا بیعت یافتہ ہوتا ہے اور تمام امور بھی وہیں سے چلائے جاتے ہیں۔ بظاہر تو کشمیر میں کوئی حکومت نہیں بس بھارتی فوج ہی فوج ہے۔  اب ذرا غور تو کیجئے کشمیریوں  پر جو حق کی بقا کی جنگ باطل سے لڑ رہے ہیں یہاں  نسلوں کی نسلیں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرچکی ہیں۔ کشمیر میں بھی معصوم جانوں کا بے رحمی سے قتلِ عام کیا جارہا ہے اور صبح شام کیا جارہا ہے۔

اہل ِ کشمیر بھی حضرت امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ کے نقشِ قدم پر چل رہے ہیں، گزشتہ کئی روز سے بھوک اور افلاس ساتھ لئے باطل کے سامنے خیمہ زن ہیں، حق کی بقاء کیلئےگردنیں تن سے جدا کروا رہے ہیں مگر باطل کے آگے جھک نہیں رہے۔ ڈٹے ہوئے ہیں عزمِ حسین کی طرح اور ہر شام، شامِ غریباں منا رہے ہیں، ہر روز جنازے اٹھا رہے ہیں۔ اللہ نے چاہا تو اب وہ وقت دور نہیں جب کشمیری اپنی آزادی کا سورج طلوع ہوتا دیکھیں گے، فتح ہمیشہ حق کی ہی ہوتی ہے چاہے اس میں سر تن سے جدا کروانا پڑے یا پھر کرنا پڑے۔

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں