The news is by your side.
Güvenilir bahis siteleri 2022
betsat
mecidiyeköy escort mecidiyeköy escort etiler escort etiler escort taksim escort beşiktaş escort şişli escort bakırköy escort ataköy escort şirinevler escort avcılar escort esenyurt escort bahçeşehir escort istanbul escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort
mariobet.biz
betwoon kayıt
deneme bonusu veren siteler
canlı casino
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
bailarinas de la hora pico Britney Shannon barely keeping whole thing in her throat Nicole Nix obtient saucissonner par un russe mec sur une table
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
gaziantep escort
gaziantep escort
modabet giriş
ankara escort escort ankara escort
Tipobet365
Canlı Kumar
istanbul evden eve nakliyat
Group of passionate teen angels lick every other Hottie babe Lou Charmelle fucking a black meat Milf Nina Elle gets fucked in dogystyle
istanbul masaj salonuistanbul masaj salonuhttp://www.escortperl.com/Gaziantep escortDenizli escortAdana escortHatay escortAydın escortizmir escortAnkara escortAntalya escortBursa escortistanbul escortKocaeli escortKonya escortMuğla escortMalatya escortKayseri escortMersin escortSamsun escortSinop escortTekirdağ escortEskişehir escortYalova escortRize escortAmasya escortBalıkesir escortÇanakkale escortBolu escortErzincan escort

زندگی کے سب ہی موسم تو نرالے دیکھے…(شاہانہ رانی کی غزل)

ڈاکٹر شاہانہ عارف کا تعلق کراچی سے ہے۔ آپ ہومیو پیتھک ڈاکٹر ہیں۔ شعروسخن کا عمدہ ذوق رکھتی ہیں اور خود بھی شاعری کرتی ہیں۔ شاہانہ رانی کے نام سے انھوں نے غزل اور نظم دونوں اصنافِ سخن میں‌ طبع آزمائی کی ہے۔ ان کی غزل باذوق قارئین کی نذر کی جارہی ہے۔ ملاحظہ کیجیے۔

غزل
زندگی کے سب ہی موسم تو نرالے دیکھے
کبھی خوشیاں کبھی تنہائی کبھی نالے دیکھے

ہوگئی شب تو شمعِ ہجر جلائی ہم نے
ہم نے پانی سے بھرے آ نکھ کے پیالے دیکھے

جب بھی چاہت کے لیے ہاتھ بڑھایا ہم نے
کوئی ساتھی نہ ملا دوست نرالے دیکھے

اس کی تصویر کو آنکھوں سے لگایا ہم نے
دل میں اک لہر اٹھی ہر سُو اجالے دیکھے

ہم تو چاہت کو ستاروں سا منور کرتے
اس تبسم میں چھپے چاند کے ہالے دیکھے

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں