The news is by your side.
Güvenilir bahis siteleri 2022
betsat
mecidiyeköy escort mecidiyeköy escort etiler escort etiler escort taksim escort beşiktaş escort şişli escort bakırköy escort ataköy escort şirinevler escort avcılar escort esenyurt escort bahçeşehir escort istanbul escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort
mariobet.biz
betwoon kayıt
deneme bonusu veren siteler
canlı casino
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
bailarinas de la hora pico Britney Shannon barely keeping whole thing in her throat Nicole Nix obtient saucissonner par un russe mec sur une table
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
gaziantep escort
gaziantep escort
modabet giriş
ankara escort escort ankara escort
Tipobet365
Canlı Kumar
istanbul evden eve nakliyat
Group of passionate teen angels lick every other Hottie babe Lou Charmelle fucking a black meat Milf Nina Elle gets fucked in dogystyle
istanbul masaj salonuistanbul masaj salonuhttp://www.escortperl.com/Gaziantep escortDenizli escortAdana escortHatay escortAydın escortizmir escortAnkara escortAntalya escortBursa escortistanbul escortKocaeli escortKonya escortMuğla escortMalatya escortKayseri escortMersin escortSamsun escortSinop escortTekirdağ escortEskişehir escortYalova escortRize escortAmasya escortBalıkesir escortÇanakkale escortBolu escortErzincan escort

بارہ مئی کا آسیب

بارہ مئی کراچی کیا پاکستان کی سیاسی تاریخ کا ایک سیاہ دن ہے۔ اس دن پورے ایک شہر جو عروس البلاد کہلاتا تھا ، اس کی حرمت کو پامال کیا گیا ۔ اس دشوار گزار عمل میں گو کہ کئی فریق تھے مگر اس کی ذمہ دار ایم کیو ایم ٹھہرائی گئی اور بہت سے کیمروں نے اس کی شہادت دی۔ مقدمے بنے ،مقدمے چلے شاید اور بنیں گے اور چلیں گے کبھی دیوار کے طور پر اور کبھی ہتھیار کے طور پر۔

میں بچپن سے کراچی میں رہتا ہوں یہیں پلا بڑھا ہوں، تعلیم حاصل کی ہے ،میں نے ایم کیو ایم کے تقریبا تمام ادوار دیکھے ہیں ایک دو تین پر مکمل خاموشی سے لے کر بڑی بڑی تصاویر پر کالک ملنے کے عمل تک۔ لیکن ایم کیو ایم نے شہر میں جو کچھ بھی کیا ہو شہر میں اس کی حمایت کبھی ختم نہیں ہو سکی ۔اس کام کے لیے کبھی سرکاری ،کبھی نیم سرکاری اور کبھی غیر سرکاری قوتوں کا استعمال کیا گیا لیکن تمام تر سخت حالات کے بعد بھی ایم کیو ایم موجود ہے۔

کراچی میں پیپلز پارٹی کا ہمیشہ سے اپنا ایک ووٹ بینک ہے جو لیاری اور ملیر میں موجود ہوتا ہے ۔ کیونکہ پیپلز پارٹی نے کراچی کی خدمت میں دن رات ایک کئے اور اس شہر کے حسن کو چار چاند لگا دئے اس لئے اب اس کا ووٹ بینک پورے کراچی میں پھیل گیا ہے ۔ اور اسی سوچ کے تحت پیپلز پارٹی نے پہلے لیاقت آباد اور اس کے بعد گلشن اقبال کے حکیم محمد سعید گراونڈ میں بارہ مئی کو جلسہ کرنے کا اعلان کیا ۔ مگر ساتھ ہی ساتھ تحریک انصاف بھی اسی گراؤنڈ میں جلسہ کرنے کا اعلان کر چکی تھی ۔

اور پھر سات مئی کو وہ دونوں جماعتیں جو ایم کیو ایم کے آسیب سے شہر کو نکالنا چاہتی تھیں اور اسی مقصد کے لیے انہوں نے بارہ مئی کا چناو ٔکیا تھا تاکہ ایم کیو ایم کے خلاف عوامی جذبات کو نئے سرے سے ابھارا جائے اور اپنے ووٹ بینک کو کار آمد بنایا جائے ، آپس میں ایسے لڑیں کہ حکیم سعید کی روح بھی کانپ گئی ہوگی۔ دونوں جانب سے پتھراؤ ایسے کیا گیا جیسے انتفادہ ہو رہا ہو اور اس کے بعد فائرنگ بھی ، کئی لوگ زخمی ہوئے قبلہ عامر لیاقت کا تو کسی نے گریبان چاک کر ڈالا ۔ نہ جانے اب کوچہ جاناں والے انہیں اب کیا پکاریں گے ۔ پہلے رینجرز آئی پھر پولیس اور قبلہ علی زیدی کے پرزور اصرار کے باوجود ایف آئی آر نہ کٹ سکی ۔ اب کٹ گئی ہے ۔لیکن ایسے جیسے کسی کی جیب کٹتی ہو۔

عدم تشدد کی پالیسی پر عمل پیرا تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی نے سات تاریخ کو امن کی کرچیاں کیوں بکھیریں؟ کیوں ایک دوسرے کے رہنماوں کو غلیظ گالیاں دیں ؟ کیوں پتھراؤ کیا جس بڑے پن کا مظاہرہ آج بلاول بھٹو صاحب کر رہے ہیں اس کا اعلان کل کیوں نہیں کیا جا سکا ؟ کیا بلاول بھٹو کو اتنا عام سیاسی فیصلہ کرنے میں اتنا وقت لگنا چاہئے ؟۔ دوسری جانب پی ٹی آئی جس سوچ کا عملی مظاہرہ آج کر رہی ہے اس کا عملی مظاہرہ کل کیوں نہیں کیا گیا ؟ کیا ان دونوں جماعتوں کی جانب سے کراچی کے عوام کو پیغام دیا گیا ہے ؟ لیکن کیا کراچی کے عوام ان باتوں سے ڈرتے ہیں ؟ اور کیا ایسی حرکتوں سے ووٹ بینک بڑھ سکتا ہے ؟ پی ٹی آئی کو عزیز آباد کی نشست پر ہونے والے انتخابات کے نتائج کو سامنے رکھنا چاہئے اور پیپلز پارٹی کو کراچی میں ہونے والے تمام انتخابات کے نتائج بھولنے نہیں چاہیے ۔

دونوں جماعتیں لڑیں اور دونوں نے بیانات داغ دئیے کہ دونوں جانب سے ایم کیو ایم بننے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ سیاسی میدان میں دو کے جھگڑے میں کسی تیسری جماعت کا بار بار نام لینا ایسے ہی ہے جیسے یہ قبولنا کہ ہمارے اعصاب پر وہ سوار ہے یا وہ نہیں تو اس کا آسیب۔ دونوں صورتوں میں اس سیاسی پارہ ہائی کے مقابلے کا ایم کیو ایم کا فائدہ ہوگا کیانکہ عوام بس اس فلم کو یاد رکھتے ہیں جو انہوں نے آخری دیکھی ہو ۔ مئی کے مہینے میں بارہ مئی کے جن کے بعد سات مئی کا آسیب بہت سوں کو بہت نقصان پہنچائے گا ۔

 

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں