The news is by your side.
Güvenilir bahis siteleri 2022
betsat
mecidiyeköy escort mecidiyeköy escort etiler escort etiler escort taksim escort beşiktaş escort şişli escort bakırköy escort ataköy escort şirinevler escort avcılar escort esenyurt escort bahçeşehir escort istanbul escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort
mariobet.biz
betwoon kayıt
deneme bonusu veren siteler
canlı casino
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
bailarinas de la hora pico Britney Shannon barely keeping whole thing in her throat Nicole Nix obtient saucissonner par un russe mec sur une table
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
gaziantep escort
gaziantep escort
modabet giriş
ankara escort escort ankara escort
Tipobet365
Canlı Kumar
istanbul evden eve nakliyat
Group of passionate teen angels lick every other Hottie babe Lou Charmelle fucking a black meat Milf Nina Elle gets fucked in dogystyle
istanbul masaj salonuistanbul masaj salonuhttp://www.escortperl.com/Gaziantep escortDenizli escortAdana escortHatay escortAydın escortizmir escortAnkara escortAntalya escortBursa escortistanbul escortKocaeli escortKonya escortMuğla escortMalatya escortKayseri escortMersin escortSamsun escortSinop escortTekirdağ escortEskişehir escortYalova escortRize escortAmasya escortBalıkesir escortÇanakkale escortBolu escortErzincan escort

شام پر امریکی حملہ‘ بلی تھیلے سے باہرآگئی

یعنی بلی تھیلے سے باہر آ گئی ؟ دو روز قبل سوشل میڈیا پر شامی سرکار کی جانب سے کیمیائی حملوں اور ان کا نشانہ بننے والے بچوں کی ویڈیوز گردش کرنے لگتی ہیں۔ اذیت ناک مناظردیکھ کر دردِ دل رکھنے والا ہرانسان چیخ اٹھتا ہے ۔ سوال کیا جاتا ہے کہ کیا کوئی مسلمان ایسا نہیں جو شامی حکومت کو سبق سکھا سکے ؟؟؟ شامی حکومت کے ظلم پر مبنی ویڈیوز تیزی سے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے لگتی ہیں۔

یہ ویڈیوز کس طرح پھیلیں اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ میرے پاس بیرون ممالک خصوصا شام کا شاید ہی کوئی دوست ایڈ ہو لیکن یہ ویڈیوز مجھ تک بھی پہنچتی ہیں۔ ہم سب مل کر ظالموں کو بددعائیں دیتے ہیں۔ انہیں نیست و نابود کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہیں۔ گراؤنڈ تیار ہوجاتا ہے تو آج معلوم ہوتا ہے کہ امریکی سرکار نے شام پر میزائل داغ دیئے ہیں اورشام کے خلاف ایک نئی جنگ شروع ہو چکی ہے۔

US POST 1

امریکا نے اب تک خطے میں جتنی گیمیں کھیلی ہیں ان کی روشنی میں اس پر اعتبار کرنا ممکن نہیں رہا۔ افغانستان میں جہاد کے نام پر مسلمانوں کے جذبات کو استعمال کرتے ہوئے سپر پاور بننا، امریکا کے قریب سمجھے جانے والے حقانی اور اسامہ سمیت دیگر کا ایسے جہاد کو فروغ دینا جس میں اب تک امریکا کا ہی فائدہ ہوا ، مصر میں انسانی ہمدردی کی آڑ میں حکومت اور ریاست کا نظام تباہ کرنا، عراق میں کیمیائی ہتھیاروں کی موجودگی اور پھر جھوٹ کھلنے تک کئی داستانیں تاریخ میں رقم ہیں۔


امریکہ کاشام کےخلاف فضائی کارروائی کا آغاز


 مسلم ممالک میں ہم ایسوں کی ہمدردیوں کی آڑ میں اب تک امریکا نے جو تباہی پھیلائی اس میں مسلمانوں کی تباہی کے بعد جھوٹ کا بازار ہی نظر آیا۔ شامی حکومت نے جو کچھ کیا اس پر مسلم ممالک کو ایکشن لینا چاہئے تھا ۔ عرب مسلم اتحاد بنا رہا ہے اور جنرل راحیل اس کا حصہ بن رہے ہیں ۔ اس اتحاد کا کیا فائدہ ہو گا مجھے نہیں معلوم لیکن میں یہ ضرور جانتا ہوں کہ شام کے بعد ایک ایسی ہی لڑائی پھر دو مسلم ممالک کے درمیان ہو گی یا پھر کسی اور مسلم ملک میں اسی طرح حکومت کے خلاف بغاوت ہو گی جس کی آڑ میں امریکا ایک بار پھر انسانی ہمدردی کے نام پر اس ملک پر میزائل داغے گا۔

US POST 2

پاکستان میں بھی ایسے ہی رویے کو فروغ دیا جا رہا ہے جس میں حکومت کسی کی بھی ہو عوام کا ایک طبقہ کفن لہراتے ہوئے کسی بھی وقت مسلح بغاوت کر سکتا ہے۔ اس کے بعد کا سکرپٹ خدانخواستہ وہی ہو گا جو شام میں دھرایا جا رہا ہے اور شام سے پہلے افغانستان ، عراق ، مصر اور دیگر مسلم ممالک میں اس پر عمل کیا جا چکا ہے۔ ہم ایک عرصہ سے یہی سکرپٹ دیکھ رہے ہیں جو ہر بار مسلم ممالک میں تباہی کی بنیاد بنتا ہے ۔ میڈیا کے طالب علموں نے “ایجنڈا سیٹنگ ” کی تھیوری پڑھی ہو گی ۔ اگر نہیں پڑھی تو ایک بار پھر پڑھ لیں اور بتائیں مسلم امہ کے جذبات کا سہارا لے کر جو کچھ ہو رہا ہے اسے اور کیا کہتے ہیں ؟۔

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں