The news is by your side.
Güvenilir bahis siteleri 2022
betsat
mecidiyeköy escort mecidiyeköy escort etiler escort etiler escort taksim escort beşiktaş escort şişli escort bakırköy escort ataköy escort şirinevler escort avcılar escort esenyurt escort bahçeşehir escort istanbul escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort
mariobet.biz
betwoon kayıt
deneme bonusu veren siteler
canlı casino
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
bailarinas de la hora pico Britney Shannon barely keeping whole thing in her throat Nicole Nix obtient saucissonner par un russe mec sur une table
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
gaziantep escort
gaziantep escort
modabet giriş
ankara escort escort ankara escort
Tipobet365
Canlı Kumar
istanbul evden eve nakliyat
Group of passionate teen angels lick every other Hottie babe Lou Charmelle fucking a black meat Milf Nina Elle gets fucked in dogystyle
istanbul masaj salonuistanbul masaj salonuhttp://www.escortperl.com/Gaziantep escortDenizli escortAdana escortHatay escortAydın escortizmir escortAnkara escortAntalya escortBursa escortistanbul escortKocaeli escortKonya escortMuğla escortMalatya escortKayseri escortMersin escortSamsun escortSinop escortTekirdağ escortEskişehir escortYalova escortRize escortAmasya escortBalıkesir escortÇanakkale escortBolu escortErzincan escort

قرآن سمجھنے کی ضرورت

یک وہ وقت تھا جب مسلمان مکہ مدینہ سے ابھرے اور دیکھتے ہی دیکھتے لاکھوں مربع میل کی سلطنت کے امیر بن گئے اور ایک آج کا دور ہے کہ ہمارے زیرِ تسلط ممالک بھی ایک ایک کر کے ہم سے چھینے جا رہے ہیں۔ پہلے وہ مسلمان تھے جنہوں نے قرآن و حدیث کو صرف یاد کرنے پر اکتفا نہیں کیا بلکہ دین کو سمجھا۔ غور و فکر کو اپنا مشغلہ بنایا۔

یہ علم اور تفکر سے محبت ہی تھی کہ دنیا کی پہلی باقاعدہ یونیورسٹی ہم مسلمانوں نے ہی قائم کی۔ لیکن افسوس کی بات تو یہ ہے کہ آج ہم اول تو قرآن کی طرف جاتے ہی نہیں ہیں اور اگر جائیں بھی تو صرف پڑھ لینے کو ہی غنیمت سمجھتے ہیں۔ اپنے بچوں کو قرآن مجید کے تیس کے تیس سپارے پڑھا دیں گے لیکن مجال ہے جو اپنے بچوں کو کبھی ایک آیت کا ترجمہ تفسیر سکھائی ہو۔

بچے تو بچے رہ گئے بڑوں نے کون سے چاند چڑھا دیے ہیں۔ مسجدوں میں نمازیوں کی کمی نہیں ہوتی لیکن کمی ہوتی ہے تو ان نمازیوں کی جن کو نماز کے فرائض اور واجبات کا بھی پتہ ہوتا ہے۔ وضو اور غسل ہر عبادت کی بنیاد ہے لیکن کتنے لوگ جانتے ہیں کہ مستعمل پانی سے نہ وضو ہوتا ہے اور نہ غسل۔

شاید ہم نے یہ نام بھی پہلی بار سنا ہے۔ شاید ہم اسے مولویوں کی خرافات کہہ کر ٹال دیں ۔ پھر نماز کیسے صحیح ہو سکتی ہے پھر ہم کہتے ہیں کہ ہماری دعائیں کیوں قبول نہیں ہوتیں۔ یہ تو صرف ایک مثال تھی ایسے لا تعداد ضروری مسائل ہیں جن کو سیکھنا اور اپنے بچوں کو سکھانا ہم کبھی سوچتے بھی نہیں ہیں۔

قرآن تو وہ باتیں ہیں جو اللہ نے ہمارے نبی پاک صلی اللہ علیہ واٰلہ وسلم سے کیں یا جو آپ کے توسط سے ہم سے کیں۔ اگر ہمیں پتہ ہی نہ چلے کہ ہمارا رب ہم سے کیا کہہ رہا ہے تو بات کا مقصد کیسے حاصل ہو سکتا ہے۔

قرآن پاک بغیر سمجھے محض تلاوت کرنے کی بھی بہت فضیلت ہے لیکن یہاں سے بات شروع ہوتی ہے ختم نہیں ہوتی۔ ہم نے بات ختم بھی یہیں پر کی ہوئی ہے۔ قرآن مجید سمجھنے کر پڑھنے سے ہی مقصد حاصل ہوتا ہے۔ دین کو سمجھے بغیر صرف عبادت سے بات نہیں بنتی۔

حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا

فَقِيْهٌ وَاحِدٌ أَشَدُّ عَلَی الشَّيْطَانِ مِنْ أَلْفِ عَابِدٍ.
’’ایک فقیہ شیطان پر ایک ہزار عابدوں سے زیادہ بھاری ہے۔‘‘

(ابو داود، السنن، باب فضل العلماء والحث علی طلب العلم، ۱: ۸۱، رقم: ۲۲۲)

ابن ماجہ میں حدیث مبارکہ ہے۔

حضر ت ابو ذرؓ روایت کرتے ہیں کہ حضورؐ نے فرمایا: ’’ اے ابو زر اگر تو جاکر اللہ کی کتاب کی ایک آیت کسی کو سکھائے تو یہ تیرے لیے سو رکعت پڑھنے سے بہتر ہے۔‘‘ (ابو دائود، السنن، ۱:۹۷،رقم:۹۱۲)۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ اللہ کی کتاب کو نظامِ حیات سمجھتے ہوئے اس پر عمل پیرا ہوا جائے اور دین کو اپنی حیات کا منشور بنایا جائے کہ ایک بار پھر وہی عروجِ ثریا حاصل ہو اور مسلمان نشاطِ ثانیہ کے ثمرات سے مستفید ہوسکیں۔

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں