The news is by your side.
betsat

bettilt

anadolu yakası escort bostancı escort bostancı escort bayan kadıköy escort bayan kartal escort ataşehir escort bayan ümraniye escort bayan
kaçak bahis siteleri canlı casino siteleri
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
maslak escort
istanbul escort şişli escort antalya escort
en iyi filmler
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
aviator oyunu oyna lightning rulet siteleri slot siteleri

یزید نے رمضان کو بھی محرم بنادیا

’’ایک بوتل پانی کی لے آؤ۔‘‘
’’خدا کا خوف کرو ، روزے میں پانی مانگتے ہو۔‘‘
’’روزہ ہے تو کیا پانی سے روزہ نہ کھولو؟‘‘
’’ لیکن ابھی تو افطار میں کافی وقت ہے۔‘‘
’’ وقت تو محرم میں بھی ابھی کافی ہے لیکن یزید نے رمضان کو بھی محرم بنا دیا ہے۔‘‘
’’ کیا مطلب؟‘‘
’’ پانی کی بوند بوند کوترس گئے ہیں۔ لیکن مجال ہے کسی پر کوئی اثر ہوا ہو۔‘‘
’’ اثر کیسے ہو جب پانی بھی بکنے لگے اور پانی کاروبار بن جائے تو سبیل لگانا صرف رسم رہ جاتا ہے۔‘‘
’’حسینؓ کے نام لیوا تو بہت ہیں چاہے وہ سنی ہو یا شیعہ سب ہی ان کے نام کا دم بھرتے ہیں۔لیکن مجال ہے جو ان کی سنت پر کوئی عمل کرے اور اس یزیدیت کے خلاف کلمہ حق بلند کرے۔‘‘
’’ مجھے تو تمہاری یہ بات پانی پانی کرگئی ہے لیکن کیا کروں پانی ادھر بھی نہیں آرہا۔ ‘‘
’’ پانی تو نہیں آرہا ہوگا لیکن پانی کا بل تو آرہا ہے ناں باقاعدگی سے۔‘‘
’’ ہاں ہاں وہ توہمیں جمع کروانا ہے چاہے پانی آئے یا نہ آئے۔‘‘
’’ میں نے تو پانی کا بل ہی جمع کروانا چھوڑ دیا ہے ، جب پانی نہیں ملتا تو بل کیوں دیں؟‘‘
’’ لیکن اس کے باوجود بل باقاعدگی سے آرہا ہوگا۔‘‘
’’ جی ہاں اور نوٹس پر نوٹس بھی کہ پانی کاٹ دیں گے۔‘‘
’’مجھے ایک بات سمجھ میں نہیں آتی کہ کسی کے پاس پینے تک کو پانی نہیں اور کسی کے پاس اتنا پانی ہے کہ باہر ندی بہانے میں مصروف ہے۔‘‘
’’اس میں سمجھ میں نہ آنے والی کون سی بات ہے ۔ بدانتظامی جب عروج پر پہنچ جائے تو ایسا ہی ہوا کرتا ہے۔‘‘
’’پانی کی لائنیں اتنی پرانی اور خستہ حال ہیں کہ ان کو تبدیل کرنے کے لیے حکومت کو تبدیل کرنا پڑے گا ۔‘‘
’’ وہ تو ممکن نظر نہیں آتا۔‘‘
’’تو پھر ڈالے جاؤ پانی کے ٹینکر یا پھر بورنگ کا پانی اور فلٹر پلانٹ کی منرل واٹر کی بوتلیں۔خدا بھی ایسی قوم کے حالات نہیں بدلتا جسے اپنے حالات کو بدلنے کا خیال نہ ہو۔‘‘
’’پانی کے نام پر سیاست ہورہی ہے لیکن عوام پانی پانی کو ترس گئے ہیں۔‘‘
’’جسے دیکھو پانی کی بوتلیں اٹھائے پانی کی تلاش میں نکلا دکھائی دیتا ہے۔یا پھر پانی سے بھری بوتلیں گھروں پر سپلائی ہوتی دکھائی دیتی ہیں۔‘‘
’’چلتا ہوں روزہ افطار کا وقت قریب آرہا ہے، سوچا تھا کہ تمہارے گھر پانی آرہا ہوگا لیکن تم بھی میری طرح نکلے ۔ اب مجھے پانی لے کر گھر جانا ہے تاکہ روزہ کھول سکیں۔‘‘
’’ رکو میں بھی تمہارے ساتھ ہی چلتا ہوں، مجھے بھی روزہ کھولنا ہے۔‘‘

Print Friendly, PDF & Email