The news is by your side.
betsat
mecidiyeköy escort mecidiyeköy escort etiler escort etiler escort taksim escort beşiktaş escort şişli escort bakırköy escort ataköy escort şirinevler escort avcılar escort esenyurt escort bahçeşehir escort istanbul escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort sakarya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort alanya escort
canlı casino
kralbet betturkey 1xbetm.info wiibet.com tipobet deneme bonusu veren siteler mariobet supertotobet bahis.com
vip escort Bitlis escort Siirt escort Çorum escort Burdur escort Diyarbakir escort Edirne escort Düzce escort Erzurum escort Kırklareli escort
etimesgut escort eryaman escort sincan escort etlik escort keçiören escort kızılay escort çankaya escort rus escort demetevler escort esat escort cebeci escort yenimahalle escort
gaziantep escort
gaziantep escort
modabet giriş
ankara escort escort ankara escort
Tipobet365
Canlı Kumar
istanbul evden eve nakliyat
Group of passionate teen angels lick every other Hottie babe Lou Charmelle fucking a black meat Milf Nina Elle gets fucked in dogystyle

دیواریں گرائیے ‘ پل بنائیے

کہتے ہیں کہ دو بھائیوں کے زرعی فارم ان کے خوب صورت دلوں کی مانند بھی ایک ساتھ تھے اور محبت و اتفاق کی وجہ سے ان کے مابین کسی بڑے تنازعے نے کبھی جنم نہیں لیا تھا ۔ لیکن ایک دن قسمت کی ستم ظریفی کہ معمولی سی چپلقش کی وجہ سے جھگڑا بڑھتے بڑھتے بڑھ گیا اور وہ دونوں ایک دوسرے کی شکل دیکھنے کے بھی روادار نہیں رہے ۔خیر نتیجہ یہ ہوا کہ ایک بھائی نے راتوں رات ایک گہرا گڑھا دونوں فارم ہائوسز کے بیچوں بیچ کھود دیا اور اگلے دن ایک ترکھان کو بلایا کہ دونوں فارم ہاؤسز کے مابین کافی اونچی دیوار تعمیر کر دے ۔

المختصر ترکھان کی مہارت اور معاملہ فہمی دیکھیں کہ اس نے اگلے روز وہاں پر دیوار کی بجائے ایک پل بنا دیا اور دونوں بھائی پھر سے دوست بن گئے ۔
آج ہم اپنے اردگرد نظر دوڑائیں تو نفرتوں کی دیواریں تو بہت نظر آتی ہیں مگر محبتوں کے پل کہیں دکھائی نہیں دیتے ۔ ہم انسان اب ایک بھیانک روپ دھار چکے ہیں کیونکہ ہم نفرت کا اظہار تو فورا کر دیتے ہیں لیکن محبت کا اظہار کرنے کے لئے ہماری ڈکشنری میں کوئی ایک لفظ بھی نہیں ملتا ۔

اصل میں خود کو درست اور باقی سب کو غلط سمجھنے کے فلسفے نے ہمیں حقیقت سے دور کر دیا ہے ، اسی کاملیت پسندی کے شوق کا یہ نقصان ہوا ہے کہ ہم اپنے دوست احباب اور رشتہ داروں کو انسان کے بجائے فرشتہ سمجھنے لگے ہیں اور ان سے بہت سی توقعات وابستہ کرنے لگے ہیں جو شاید ہم خود بھی کبھی پوری نہیں کر سکتے ۔

اپنے خوب صورت رشتوں کو ہم اپنے الفاظ سے، اپنے طرزعمل سے آلودہ کر دیتے ہیں۔ وقت گذر جاتا ہے اور اپنے روٹھے ہوئے پیارے رشتوں کو نہیں مناتے ۔ اپنی خود ساختہ انا کے خول میں بند رہتے ہیں ، تو آئیے ناں آج ان انا کے بتوں کو توڑ کر محبتوں کے ، خلوص کے پل بنائیں ، ہمیں نفرتوں کی بجائے رواداری ، برداشت ، محبت ، اخلاص ، پیار کے پل بنانے کی ضرورت ہے ۔

ہم سیاسی جماعتوں کے قائدین کو تو بہت نصیحتیں کرتے ہیں کہ ان کو چاہیے کہ آپس میں اتحاد سے رہیں اور کسی بھی قسم کے اختلاف سے باز رہیں جبکہ یہ سب کچھ ہم سب کی زندگی میں بھی تو ضروری ہے ۔شاید اب بھی ہمارے پاس وقت ہے کہ خود سے محبت کرنے والوں کو صدا دے دیں شاید کوئی ہماری جانب سے پکار کا ہی منتظر ہو۔


اگر آپ بلاگر کے مضمون سے متفق نہیں ہیں تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پرشیئرکریں

Print Friendly, PDF & Email
شاید آپ یہ بھی پسند کریں